جب کوئی شخص وفات پا جاتا ہے تو قبر میں اسے اپنے رشتے داروں کی جانب سے سب سے پہلے اور سب سے زیا دہ کس چیز کا انتظار رہتا ہے

نبی کریم ﷺ نے ارشاد فرمایا کہ قبر میں مردہ ایسی حالت میں ہوتا ہے۔کہ جیسے کوئی ڈوبتا ہوا شخص مدد کیلئے پکار رہا ہو۔ کہ کو ئی اس کا ہاتھ پکڑ لے۔

تو وہ مردہ منتظر رہتا ہے۔ کہ اس کے باپ ، ماں یا بھائی دوست۔ کی جانب سے اس کو کوئی دعا پہنچے۔ پس جب اسے کوئی دعا پہنچتی ہے۔ تو دعا کا پہنچنا اس کیلئے دنیا اور دنیا کی تمام چیزوں سے محبوب ہوتا ہے۔

اور اللہ تعالیٰ قبر والوں کو دنیا والوں کی طرف سے دعا کا ثواب پہنچاتا ہے۔ اور بیشک زندوں کی طرف سے مردوں کیلئے بہترین ہدیہ استغفار ہے۔

دنیا کی زندگی بس چند دن کی ہے۔آخرت کی زندگی لازوال اور کبھی نہ ختم ہونے والی ہے۔ہم دنیا داری میں ایسے مصروف ہوئے ہیں کہ آخرت کو بھول گئے ہیں۔یہ ہمارے لئے بہت تکلیف دہ ہے۔

آج ہم اپنے آباواجداد کو بھول گئے ہیں۔ان کے لئے ہدیہ کا بھی ٹائم نہیں ہے۔دنیاداری اور فضول کام کے لئے ہمارے پاس وقت ہے۔ہم اپنی تخلیق کا مقصد بھول گئے ہیں۔ہمارا مقصد اپنے رب کو راضی کرنا ہے۔

رسول اللہ کے احکامات کی روشنی میں زندگی گزارنی ہے۔تاکہ ہماری دنیا اور آخرت دونوں سنور جائیں۔

 

Sharing is caring!

You may also like...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *