گھر میں روزانہ استعمال کی عام چیزصحت کی سب سے بڑی دشمن نئی تحقیق نے ہنگامہ برپا کردیا

کون ہے جو بیمار ہونا چاہتا ہے؟‏ بیماری تو نہ صرف اِنسان کا جینا دوبھر کرتی ہے بلکہ یہ جیبیں بھی خالی کر دیتی ہے۔‏ اِس کی وجہ سے آپ کی طبیعت بیزار رہتی ہے،‏ آپ کام پر یا سکول نہیں جا سکتے،‏ کمائی نہیں کر سکتے اور اپنے گھر والوں کی دیکھ‌بھال بھی نہیں کر سکتے۔‏ اُلٹا دوسروں کو آپ کا خیال رکھنا پڑتا ہے اور ہو سکتا ہے کہ آپ کو علاج اور دوائیوں پر بھاری رقم خرچ کرنی پڑے۔‏

کسی نے کیا خوب کہا ہے کہ ”‏پرہیز علاج سے بہتر ہے۔‏“‏ کچھ بیماریاں ایسی ہوتی ہیں جن سے ہم بچ نہیں سکتے۔‏ پھر بھی آپ کچھ ایسی احتیاطی تدابیر کر سکتے ہیں جن سے بعض بیماریوں میں مبتلا ہونے کا اِمکان یا تو کم ہو سکتا ہے یا پھر بالکل ختم ہو سکتا ہے۔‏ آئیں،‏ پانچ ایسے طریقوں پر غور کریں جن پر عمل کرنے سے آپ اپنی صحت کو بہتر بنا سکتے ہیں۔‏

بہت سے صحت کے اِداروں کے مطابق ہاتھ دھونا بیماریوں اور اِن کے پھیلاؤ سے بچنے کا ایک بہترین طریقہ ہے۔‏ عام طور پر لوگوں کو نزلہ،‏ زکام اور فلو اِس لیے ہوتا ہے کیونکہ وہ گندے ہاتھوں سے اپنی ناک یا آنکھوں کو ملتے ہیں۔‏ اِن بیماریوں سے بچنے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ آپ دن میں اکثر ہاتھ دھوئیں۔‏ 

آپ کے خیال میں و ہ کونسی گھر میں ایسی چیز ہے جو کہ سب سے زیادہ آپ کی صحت کیلئے خطرنا ک اور نقصان دہ ہے اگر آپ ٹوائلٹ کی سیٹ کے بارے میں سوچ رہے ہیں تو ایسا بلکل نہیں درحقیقت ایسی بہت سی چیزیں ہوتی ہیں جن کی سطح پر ٹوائلٹ سے زیادہ جراثیم ہوتے ہیں تاہم ان سب میں سب سے آگے وہ عام ترین چیز ہے

جو گھر میں خواتین دن میں کئی بار چھوتی ہیں اور وہ ہے کچن میں موجود برتن دھونے میں مددگار اسپنج تحقیق کیمطابق کچن کا اسپنج اتنے زیادہ جراثیم کا گھر ہوتا ہے کہ وہ اندازوں سے بھی زیادہ صحت کیلئے نقصان دہ ثابت ہوسکتا ہے ا س تحقیق کے محققین نے متعدد استعمال شدہ اسپنج کے نمونوں کا جائزہ لیا اور بتایا کہ اس سے زیادہ جراثیموں کی نشوونما والی چیز گھر میں کوئی اور نہیں ہوسکتی ہے

۔ان کا کہنا تھا کہ نتائج سے معلوم ہوتا ہے کہ کچھ اسپنج میں اندازوں سے بھی زیادہ جراثیم کی اقسام موجود ہوتی ہیں جن کی نشوونما گیلے اور غذا کے اجزاء کے نتیجے میں زیادہ تیزی سے ہوتی ہے ۔تحقیق کے مطابق یہ اسپنج معدے کے امراض اور دیگر طبی مسائل کا خطرہ بڑھاتے ہیں

تحقیق کے مطابق کچن اسپنج کی صفائی بھی ممکن نہیں ہوتی اور پانی میں اُبالنے سے بھی صرف ساٹھ فیصد جراثیموں کا خاتمہ ہوتا ہے ۔لہذا لوگوں کو ہر ہفتے اسے بدل لینا چاہیے محققین کے مطابق ہر ہفتے اسپنج بدل لینا متعدد طبی مسائل سے تحفظ دینے میں مدد گار ثابت ہوسکتا ہے خاص طور پر خواتین کیلئے یہ احتیاط بہت ضروری ہے ۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں